جسم میں گلٹیاں کیوں پیدا ہو رہی ہیں ۔ گلٹیوں کے لیے اب اپر یشن کی ضرورت نہیں۔

جسم میں گلٹیاں کیوں پیدا ہو رہی ہیں ۔ گلٹیوں کے لیے اب اپر یشن کی ضرورت نہیں۔

جس کی وجہ انہیں بر تنوں کا استعمال ہے۔ تو ہمیں چاہیے کہ ہمیں پہلے تو ان باتوں کے بارے میں سوچنا چاہیے کیونکہ یہ ہماری بنیادی ضروریات ہیں اگر ہم ان کے بارے میں نہیں سوچیں گے تو ہمیں نہ تو کوئی بیماری بچا سکتی ہے اور نہ ہی کوئی میڈیسن۔ تو ہمیں ان بنیادی باتوں پر ہی دھیان دینا ہو گا تا کہ ہم ایک صحت مند زندگی گزار سکیں۔ سروے ٹیم میں تحقیق کی اور پتہ یہ چلا کہ سادہ لوگ کام کا ج کر تے تھے سب سے بڑھ کر متوازن کھانا کھاتے ہیں مٹی کے برتنوں میں کھانا کھاتے تھے آج سائنس بھی اس بات کو ماننے پر مجبور ہو گئی ہے۔ کہ مٹی کے پکنے والا کھانا ضرور ہضم ہو تا ہے

نہ کہ کسی سٹیل کے برتن میں تیار کیا جا نے والا شوگر بلڈ پریشر جوڑوں کا درد کینسر ، گلٹیاں یہ سب بیماریاں جو ہیں ان سب بیماریوں کا حل ہو سکتا ہے۔ ضرورت اس امر کی ہے ماضی کی طرح حقیقت کے قریب لوٹ جا ئیں کم از کم کھانے کے وقت تبدیل کر دیں اس سے بھی گلٹیاں بننے کی سب سے بڑی وجہ خ و ن کا گاڑھا ہو نا ہے ۔ اب جو کھان کوکر میں تیار ہو تا ہے جیسے چند منٹوں میں تیار ہو جا تا ہے کوکر میں ایک پریشر ہے آپ چکن ڈالیں سٹیم اس کو گرم کر ے گا تو پریشر اسے پھاڑ دے گا۔

گوشت گل جا ئے گا ہڈیاں پگھل جائیں گی۔ بلڈ پریشر کے مرض میں مبتلا ہو رہے ہیں۔ تحقیق کے مطا بق ہمارا جو کھا نا ہے یہی ہمارا کھانا ہی ہمیں بیماریوں میں مبتلا کر رہا ہے ایک طرف ہمارے کھانے غیر معیاری ہونے کے ساتھ ساتھ چٹپٹے اور روغنی ہیں دوسری جانب ہمارے کھانے سلور کے بر تنوں میں سٹیل کے بر تنوں میں تیار کیے جا تے ہیں ان میں ہانڈی پکتی نہیں گلتی نہیں جب کہ مٹی کے بر تن میں کھانا پکتا ہے ان بر تنوں میں تیار ہونے والا کھانا ہضم نہیں ہو تا یہی وجہ ہے ہر سو میں سے اٹھتر فیصد لوگ نظام ہاضمہ کی خرابی میں مبتلا ہیں۔

جس کا معدہ ہی خراب ہے اس کا سارا جسم خراب ہو جا ئے گا ۔ چھوٹے سے لے کر بڑی عمر کے لوگ اس بیماری میں مبتلا ہو رہے ہیں۔ جیسا کہ ہم سب ہی اس بات سے واقف ہیں کہ ہر کو ئی ہی چاہتا ہے کہ اسے کسی بھی قسم کی کو ئی بھی بیماری نہ ہو وہ ہر بیماری سے آزاد رہے جیسا کہ اس معاشرے میں ہم جانتے ہیں کہ ہر دوسرا کسی نہ کسی بیماری میں مبتلا ہے تو ان بیماریوں کی وجہ آخر کیا ہے ؟ حالانکہ ہمارے ہاں ایسی ایسی سہولیات موجود ہیں جن کو استعمال کر کے انسانی زندگی تو آسان ہو گئی ہے لیکن انسان دن بدن کسی نہ کسی بیماری میں مبتلاہو تا جا رہا ہے ۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.